ہم نےکیا دیا پاکستان کو ؟

فائزہ تسنیم
اسلام آباد

کئی دن سے یہ موضوع دماغ میں ہل چل مچا رہا تھا
“ہم نے پاکستان کو کیا دیا ”
تو جناب میں بتاتی ہوں کہ ہم نے پاکستان کو کیا دیا ؟؟
ہم نے پاکستان کو طعنے دیئے، ہم نے پاکسان کونکمے عاشق دیئے۔
ہم نے پاکستان کو ٹک ٹاک کے محاز پر سر بکف کھڑے مجاہد دیئے ۔
ہم نے اس پاک ملک کو زانی ،راہزن ،ڈاکو اور لٹیرے دیئے ۔۔۔ہم نے اس پاک دھرتی کو بے پردہ بےہودہ رقاصائیں دیں ۔۔۔
ہم نے بیرونِ ملک جا کر ملک کو گالیاں دیں ۔۔(اکثر ایسا کرتے ہیں سب کا نہیں کہا )
ہم نے تعلیم یافتہ نوجوانوں کو گوروں کے دیس بھیج کر یہاں چرسی، افیمچی، جوئے باز اور سستے عاشق دیئے ۔۔۔

کیا ملک ایسے ترقی کرتے ہیں ؟؟
جب ہم تعیلم مکمل کرنے کے بعد وطن کے روشن مستقبل کے لیے اپنی کوششیں یہیں ادھوری چھوڑ کر باہر ممالک کو سدھاریں اور وہاں بیٹھ کر ملک کی حالت پر افسوس کا اظہار کریں ۔۔۔ وہاں بیٹھ کر ملکی حالات پر تجزیے کریں ۔۔۔ تو کیا ایسے پاکستان ترقی کی راہ پر چل پڑے گا؟؟؟؟
کبھی بھی نہیں ۔۔۔۔
کیا یہ ملک صرف بوڑھوں بچوں اور خواتین کا بوجھ اٹھانے کے لیے ہی رہ گیا ہے ۔۔۔جب پردیس میں کام کےقابل نہیں رہے تو واپس ملک آ گئے ۔ ۔ ۔
جن کو ہم قوم کا مستقبل کہتے تھے
انہیں اپنی جگہ تیار کر کے گوروں اور عربیوں کی خدمت گزاری کے لیے بھیج دیا ۔۔ اور پاکستان کو تاریکی میں ڈبو دیا ۔۔۔۔
کیا یہ ملک ہمارے اس عمل سے ترقی کی راہ پر چلے گا ؟؟
مانتی ہوں حکمران ہماری طرح نااہل اور بدنیت ہیں تو کیا ہم باہر سے بیٹھ کر انہیں اہلیت اور دیانت کے اسباق پڑھائیں گے تو وه پاکسان کو ترقی کی راہ پر گامزن کر دیں گے ۔
ہر گز ایسا کچھ نہیں ہونے والا جب تک ہم ملک کی ترقی کے لیے اپنا کردار ادا نہیں کریں گے ۔ ۔
میں نے جتنے بھی ترقی پسند اور تعلیم یافتہ لوگ تجزیے کرتے دیکھے وه سب پاکستان سے باہر بیٹھ کر ہی تجزیے کر رہے ہوتے ہیں ۔۔۔(کچھ لوگ ہیں جو ملک کی خاطر سوچتے ہیں اپنا پیسہ اپنا وقت دیتے ہیں پر چند ایک ہی ہیں ایسے )

ہم تو شاید وه لوگ ہیں جو جس تھالی میں کھاتے ہیں اسی میں چھید کرتے ہیں ۔۔پہلے لوگ کہتے تھے “جس کا کھاؤ اس کا گاؤ “اب اس کا الٹ ہو چکا ہے
کچھ لوگ تو اسی دھرتی پر رہ کر اسی کا کھا کر اسے کے خلاف بول رہے ہوتے ہیں ۔۔
اور جو لوگ کہتے ہیں ہم پاکستان میں نہیں ہمیں کیا پاکستان کے حالات جیسے بھی ہوں ۔ کوئی مرتا ہے تو مرے کوئی جیتا ہے تو جیئے ۔
ان کے لیے بس اتنا ہی کافی ہے ۔ ارے تم لوگ یہاں کے تو کیا کہیں کے بھی نہیں ہو ۔اگر تم پاکستان میں نہیں ہو تو اپنی زبان بھی پاکستان کے خلاف استعمال کرنا بند کر دو جہاں کے ہو وہیں کے رہو ۔ہم جانیں ہمارا پاکستان جانے اور یہاں کی عوام جانے ۔
تم پر “دھوبی کا کتا نہ گھر کا نہ گھاٹ کا ”
کی مثال صادق آتی ہے۔۔
کیا پاکستان میں لوگ صرف لڑائیاں ،جھگڑے، ریپ ،قتل غارت ہی کرتے رہتے ہیں جہاں نظر پڑے وہ یہی رونا رو رہا ہوتا ہے ۔۔۔
کیوں ہم اپنے ملک کو بدنام کرنے میں لگے ہوۓ ہیں ؟؟
کیوں کبھی کوئی ٹیلنٹ بھی سامنے نہیں لایا جاتا ؟؟؟
اگر کوئی ٹیلنٹ سامنے لایا جاتا بھی ہے تو وه ٹیلنٹ ناچ گانے تک ہی محدود ہوتا ہے ۔۔۔آخر کیوں ؟؟
جو لوگ دن رات ایک کرتے ہیں جو لوگ واقعی محنتی ٹیلنٹڈ ہوتے ہیں پاکستان کی ترقی کے لیے کوشاں ہوتے ہیں ان کا ٹیلنٹ کیوں سامنے نہیں لایا جاتا ۔۔ہم لوگ خود اپنے ملک کی جڑیں کاٹتے ہیں، جس کشتی میں سوار ہیں اسی میں سوراخ کرتے ہیں اور شکوے ہم اغیار سے کرتے ہیں ۔۔۔آخر کیوں ؟؟
وضع میں تم ہو نصاریٰ تو تمدن میں ہنود
وہ مسلماں کہ جنہیں دیکھ کر شرمائیں یہود

اگر کسی کو برا لگے تو اس کے لیے معذرت خواہ ہوں ۔ ۔مگر سچ تو یہی ہے جو بیان کر دیا ۔
حق بات پے کٹتی ہے تو کٹ جائے زبان میری
اظہار تو کر دے یہ بہتا ہو خوں میرا

456 total views, 9 views today

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *