جنگ ستمبر65ءمیں 19لانسرز کا کردار

تقسیم ہند کے بعد ہی سے پاکستان اور بھارت کے درمیان میں خاصی کشیدگیاں رہیں۔ اگرچہ تمام مسائل میں مسئلہ کشمیر سب سے بڑا مسئلہ رہا مگر دوسرے سرحدی تنازعات بھی چلتے رہے،1965ءکی جنگ میں جہاں پاک فوج کے دیگر یونٹس نے بہادری اور شجاعت کا مظاہرہ کرتے ہوئے دشمن کے دانت کھٹے کئے وہاں 19لانسرز کے بہادر جوانوں نے بھی بھارتی فوج کو ناکوں چنے چبوادیے اور انہیں گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردیا19لانسرزجو کہ پہلے فین ہارس برٹش آرمی یونٹ تھی اور کیپٹن والٹر فین نے 1860ءمیں کانپور(انڈیا) میں اس کی بنیاد رکھی پاکستان آرمی کی اہم یونٹ ہے جس کی کامیابیوں کا سہرا ایک صدی سے بھی زیادہ عرصہ پر محیط ہے اس رجمنٹ نے 1861ءمیں اوپیم وارمیں چین کے دارالخلافہ بیجنگ کو آزاد کرایا،1870-1880سیکنڈافغان وارمیں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیااور احمد خیل کی جنگ میں اپنا لوہا منوایا،1914-1918ءپہلی جنگ عظیم میں فرانس میں جنگ میں حصہ لیا،1939-1945ءدوسری جنگ عظیم،1965ءپاک بھارت جنگ اورپھر1993-1995ءیو این او مشن کے تحت صومالیہ میں یرغمال ہو نے والے امریکن رینجر کے اہلکاروں کو کامیاب آپریشن کے بعد صومالی جنگجوو¿ں سے بازیاب کر واکے دنیا میں اپنا لوہا منوایا۔فین ہارس برٹش آرمی یونٹ جو کہ تقسیم پاکستان کے وقت پاکستان کے حصہ میں آئی 1956ءمیں اس کا نام تبدیل کر کے 19لانسر زآرمی یونٹ رکھ دیا گیااور تمام انگریزی اعزازات کو چھوڑدیا گیا 1965ءکی پاک انڈیا جنگ میں اس کی 12 ڈویڑن تھیں اور انہوں نے چار سیکٹرز لاہور،قصوراور چونڈہ سیکٹر میں دشمن کا ڈٹ کر مقابلہ کیا اور انہیں ناکوں چنے چبوائے اس جنگ میں 19لانسرز کے بہت سارے سپوتوں نے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کر کے اس مادر وطن کو قائم رکھنے کا وعدہ پورا کیا 19لانسرز آرمی یونٹ کا سب سے بڑ اکارنامہ یہ تھا کہ انہوں نے1965ءکی جنگ میں چونڈہ محاذ پر دشمن کی ٹینکوں کی بہت بڑی فوج کا ڈٹ کرمقابلہ کیا اور انہیں نیست و نابود کر دیا اس جنگ میں شہید ہو نے والے 9شہدا ءسوار دبیر شہید،لانس دفعدار،سوار ایم وی عبدالمتین،لانس دفعدار محمد خورشید،سوار محمد وارث،لانس دفعدار عبدالخالق،ایل اے ڈی محمد شفیع،سوار ذکاءاللہ،سوار محمد اسحاق،سوار محمد ظریف شہید تمغہ جرات کے مزارات ڈسکہ میں بنائے گئے ان شہدا ءکے علاوہ جنرل حمید گل بھی اسی سکواڈرن سے تعلق رکھتے تھے انہوں نے بھی1965ءکی جنگ میں سکواڈرن کمانڈر کی حیثیت سے اپنی شجاعت کے جوہر دکھائے ہر سال 6ستمبرکی صبح کو شہدا ءکے مزارات پر دعائیہ تقریبات ہو تی ہیں،ان کو خراج عقیدت پیش کر نے کے لیئے 19لانسرز کا چاک و چوبند دستہ سلامی پیش کر تا ہے اور ان کے اعزاز میں ایک پروقارتقریب منعقد ہوتی ہے جس میں علاقہ کی سیاسی،مذہبی،سماجی شخصیات کے علاوہ شہداءکے لواحقین بھی مزارات پر حاضری دیتے ہیں اور شہدا ءکو خراج عقیدت پیش کیا جاتا ہے جس میں علاقہ بھر کے عوام بھر پور شرکت کر تے ہےں یہاں میلہ کا سماں ہوتا ہے اور مختلف مکاتب ہائے فکر کی طرف سے لنگر بھی تقسیم کیا جاتا ہے علاقہ کے سیاسی، سماجی اور مذہبی حلقوںکی طرف سے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمرجاوید باجوہ سے گذارش کی ہے کہ شہداءکے مزارات کو بہتر انداز میں تعمیر کیا جائے اور یہاں پر ایک اعلی قسم کی یادگار بھی بنائی جائے جو کہ شہداءکے شایان شان ہوجو عوام کو شہداءکی عظیم قربانیوں کی یاددلاتی رہے

5,947 total views, 134 views today

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *